logo-mini

کمرے میں یا گھر میں اجازت لے کر داخل ہونا

کمرے میں یا گھر میں اجازت لے کر داخل ہونا

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

  1. میرے اکثر پاکستانی بہن بھایٗی یہ بات پڑھ کر حیران ہوں گے اور کچھ اعتراض بھی کریں گے کہ اپنے ہی گھر میں کون اجازت لے گا ؟

کسی کے گھر تو مانا اب وہ بھی قریبی رشتے داروں کا اگر گیٹ کھلا ہو تو بنا اجازت چلے جاتے ہیں کے بھائی یہ اپنا ہی گھر ہے اجازت کیا لینی؟ اور گھر والے بھی یہی یہی کہہ کر اخلاقی فرض نبھاتے ہیں کہ کوئی بات نہیں اپنا ہی بھائی ہے یا بھائی جیسا ہے یا باپ برابر ہے یا اپنے بچوں جیسا ہے اس طرح ہلکی ہلکی گنجائش دیتے دیتے آج بات بہت آگے نکل چکی ہے اور جو ان اصولوں کی بات کرے اس کی طرف یا تو ہنس کر اس طرح دیکھتے ہیں جیسے یہ کسی اور سیارے کی مخلوق ہے یا کس صدی کی روح تمہارے اندر ہے اس طرح کے طنز سے مذاق موڑ آتے ہیں یا پھر غصہ کر لیا جاتا ہے کہ عجیب بداخلاق ہے ملنا نہیں چاہتے اور ان سب باتوں کو نہ ماننے والوں کو اکثر میں نے شرمندہ ہوتے دیکھتے دیکھا ہیں لیکن عادت پھر بھی نہیں بدلتی، پھر اپنی نوجوان نسل کی بے راہ روی کی شکایتیں کرتے پھرتے ہیں جو
آج مغرب یا ہند کی عکاسی کرتے نظر آتے ہیں نا محرم لڑکے لڑکیاں شادی سے پہلے دوستی موبایٰل چیٹنگ ہوٹل اور فوٹو شوٹ بہت عام ہو چکی ہے کیونکہ ان کو گھر کا ماحول شروع سے ہی ایسا ملتا ہے اسلام میں دوستی تو دور کسی کے گھر جانا حتی کہ اپنے گھر جانا یا اپنے ہی گھر میں کسی کمرے میں جانے تک کے لیے اصول بنا دیے ہیں

آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے صحابہ کرام رضی اللہ تعالیٰ عنہٗ کو فرمایا کہ اپنے گھر میں جانے سے پہلے اجازت لے لیا کرو اور دوسروں کے گھروں میں بھی

تو ایک صحابی نے حیران ہو کر پوچھا کہ اپنی ہی ماں سے اجازت لیں تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ کیا تمہیں اچھا لگے گا کہ تم اچانک گھر جاؤ اور اپنی ماں بہن بیٹی یا گھر میں مہمان کو بے پردہ دیکھو

حضرت عمر رضی اللہ عنہ ایک دن آرام فرما رہے تھے کہ ان کا غلام بن اجازت کمرے میں داخل ہوا حضرت عمر رضی اللہ عنہ کو شرمندگی ہوئی اور دل میں خیال آیا کہ کمرے میں اجازت لیکر آنے کا حکم ہوتا اس پر یہ آیات نازل ہوئیں

اللہ تعالی ہم سب کو ایک دوسرے آسانیاں عطا فرمائے اور آسانیاں بانٹنے کی توفیق عطا فرمائے اللھم آمین یا رب العالمین

(مطلوب دعا آسیہ مشتاق (روبی

يَٰٓأَيُّهَا ٱلَّذِينَ ءَامَنُوا۟ لِيَسْتَـْٔذِنكُمُ ٱلَّذِينَ مَلَكَتْ أَيْمَٰنُكُمْ وَٱلَّذِينَ لَمْ يَبْلُغُوا۟ ٱلْحُلُمَ مِنكُمْ ثَلَٰثَ مَرَّٰتٍۢ ۚ مِّن قَبْلِ صَلَوٰةِ ٱلْفَجْرِ وَحِينَ تَضَعُونَ ثِيَابَكُم مِّنَ ٱلظَّهِيرَةِ وَمِنۢ بَعْدِ صَلَوٰةِ ٱلْعِشَآءِ ۚ ثَلَٰثُ عَوْرَٰتٍۢ لَّكُمْ ۚ لَيْسَ عَلَيْكُمْ وَلَا عَلَيْهِمْ جُنَاحٌۢ بَعْدَهُنَّ ۚ طَوَّٰفُونَ عَلَيْكُم بَعْضُكُمْ عَلَىٰ بَعْضٍۢ ۚ كَذَٰلِكَ يُبَيِّنُ ٱللَّهُ لَكُمُ ٱلْءَايَٰتِ ۗ وَٱللَّهُ عَلِيمٌ حَكِيمٌۭ
Ya ayyuha allatheena amanoo liyastathinkumu allatheena malakat aymanukum waallatheena lam yablughoo alhuluma minkum thalatha marratin min qabli salati alfajri waheena tadaAAoona thiyabakum mina alththaheerati wamin baAAdi salati alAAishai thalathu AAawratin lakum laysa AAalaykum wala AAalayhim junahun baAAdahunna tawwafoona AAalaykum baAAdukum AAala baAAdin kathalika yubayyinu Allahu lakumu alayati waAllahu AAaleemun hakeemun
اے ایمان والو! چاہیے کہ تم سے اذن لیں تمہارے ہاتھ کے مال غلام اور جو تم میں ابھی جوانی کو نہ پہنچے تین وقت نمازِ صبح سے پہلے اور جب تم اپنے کپڑے اتار رکھتے ہو دوپہر کو اور نماز عشاء کے بعد یہ تین وقت تمہاری شرم کے ہیں ان تین کے بعد کچھ گناہ نہیں تم پر نہ ان پر آمدورفت رکھتے ہیں تمہارے یہاں ایک دوسرے کے پاس اللہ یونہی بیان کرتا ہے تمہارے لیے آیتیں، اور اللہ علم و حکمت والا ہے،
O People who Believe! The slaves you possess and those among you who have not attained adulthood, must seek your permission on three occasions; before the dawn prayer, and when you remove your garments in the afternoon, and after the night prayer; these three times are of privacy for you; other than these three times, it is no sin for you or for them; moving about around you and among each other; and this is how Allah explains the verses for you; and Allah is All Knowing, Wise.
(24 : 58)
وَإِذَا بَلَغَ ٱلْأَطْفَٰلُ مِنكُمُ ٱلْحُلُمَ فَلْيَسْتَـْٔذِنُوا۟ كَمَا ٱسْتَـْٔذَنَ ٱلَّذِينَ مِن قَبْلِهِمْ ۚ كَذَٰلِكَ يُبَيِّنُ ٱللَّهُ لَكُمْ ءَايَٰتِهِۦ ۗ وَٱللَّهُ عَلِيمٌ حَكِيمٌۭ
Waitha balagha alatfalu minkumu alhuluma falyastathinoo kama istathana allatheena min qablihim kathalika yubayyinu Allahu lakum ayatihi waAllahu AAaleemun hakeemun
اور جب تم میں لڑکے جوانی کو پہنچ جائیں تو وہ بھی اذن مانگیں جیسے ان کے اگلوں نے اذن مانگا، اللہ یونہی بیان فرماتا ہے تم سے اپنی آیتیں، اور اللہ علم و حکمت والا ہے،
And when the boys among you reach adulthood, then they too must seek permission like those before them had sought; this is how Allah explains His verses for you; and Allah is All Knowing, Wise.
(24 : 59)
وَٱلْقَوَٰعِدُ مِنَ ٱلنِّسَآءِ ٱلَّٰتِى لَا يَرْجُونَ نِكَاحًۭا فَلَيْسَ عَلَيْهِنَّ جُنَاحٌ أَن يَضَعْنَ ثِيَابَهُنَّ غَيْرَ مُتَبَرِّجَٰتٍۭ بِزِينَةٍۢ ۖ وَأَن يَسْتَعْفِفْنَ خَيْرٌۭ لَّهُنَّ ۗ وَٱللَّهُ سَمِيعٌ عَلِيمٌۭ
WaalqawaAAidu mina alnnisai allatee la yarjoona nikahan falaysa AAalayhinna junahun an yadaAAna thiyabahunna ghayra mutabarrijatin bizeenatin waan yastaAAfifna khayrun lahunna waAllahu sameeAAun AAaleemun
اور بوڑھی خانہ نشین عورتیں جنہیں نکاح کی آرزو نہیں ان پر کچھ گناہ نہیں کہ اپنے بالائی کپڑے اتار رکھیں جب کہ سنگھار نہ چمکائیں اور ان سے بھی بچنا ان کے لیے اور بہتر ہے، ور اللہ سنتا جانتا ہے،
And the old women residing in houses who do not have the desire of marriage – it is no sin upon them if they discard their upper coverings provided they do not display their adornment; and avoiding even this is better for them; and Allah is All Hearing, All Knowing.
(24 : 60)

Asiya Mushtaq

آؤ اللہ کی رسی کو مل کر تھام لیں Our all posts are researched carefully and designed by us. قرآن سمجھنے والے کبھی فرقہ نہیں بن سکتے اور فرقہ بننے والے کبھی قران نہیں سمجھ سکتے


Leave a Comment

Leave a Reply