logo-mini

پیر و مرشد کی بیعت کرنا

السَـــــــلاَم وُ عَلَيــْــكُم و َرَحْمَةُ ﷲ وَ بَرَكـَـاتُه!

آج ہم پیر و مرشد پکڑنے انکی بیعت کرنے کے بہت نازک اور اہم موضوع پر روشنی ڈالیں گے. اللّہ ہماری رہنمائی فرمائے .اللھم آمیٰن یا رب اللعالمٰین
اکثر مسلمین کا کہنا ہے کہ اللّہ تک پہنچنے کے لیے کوئی ذریعہ اور وسیلہ ہونا ضروری ہے ورنہ بات نہیں بنتی, ہم وسیلہ اور سفارش ڈھونڈ رہے ہیں یا فلاں پیر ہمارا وسیلہ ہے.
اگر اس بات کی کوئی حقیقت ہے تو دین کو قرآن کے نزول کے ساتھ ہی مکمل کیوں کر دیا گیا؟ قرآن کو سمجھنے کے لیے اتنا آسان کیوں کر دیا گیا؟
اگر اللّہ پر ایمان کے بعد کچھ ضروری ہے تو اللّہ کے تمام پیغمبروں, کتابوں اور فرشتوں پر دل سے یقین رکھنا, اللّہ اور اسکے رسول صلٰی اللّہ علیہ وسلم کی اطاعت و فرمانبرداری کرنا جس کی قرآنِ مجید میں باربار تاکید کی گئی ہے.
“بیشک ہم نے تمھیں بھیجا حاضر و ناظر اور خوشی اور ڈر سناتا.
تاکہ تم ایمان لاؤ اللّہ پر اور اسکے رسول صلٰی اللّہ علیہ وسلم پر اور انکی تعظیم کرو اور توقیر کرو, اور صبح شام اللّہ کی پاکی بولو”.
رہی بات بیعت کی تو وہ ہر مسلم پہلے سے ہی کلمہ پڑھتے ہی اللّہ کے رسول صلٰی اللّہ علیہ وسلم کی بیعت میں آجاتا ہے, اب اس پاک بیعت کو ختم کرکے کون دوسری جگہ بیعت چاہے گا؟ یا کوئی دوسری ہستی اللّہ پاک نے اس قابل پیدا فرمائی؟ جس پاک رسول صلٰی اللّہ علیہ وسلم کو خود اللّہ پاک نے تمام پیغمبروں کے سردار کہہ دیا ہو.
وہ جو تمھاری بیعت کرتے ہیں وہ تو اللّہ ہی سے بیعت کرتے ہیں, انکے ہاتھوں پر اللّہ کا ہاتھ ہے,اور جس نے عہد توڑا اسنے اپنے سب سے بڑے عہد کو توڑا, اور جس نے پورا کیا وہ عہد جو اس نے اللّہ سے کیا تھا تو بہت جلد اللّٰہ اسے بڑا ثواب عطا فرمائے گا۔

مجھے بھی اکثر مجبور کیا گیا اکثر بحث ہوئی تو میں یہ کہہ کر بات ختم کر دیتی ہوں کہ اب اس پکے عہد کے بعد کوئی گنجائش باقی نہیں بچتی ہاں ایک صورت ہو سکتی ہے کہ آپ مجھے پیارے آقا خاتم النبیٰن صلٰی اللّہ علیہ وسلم سے زیادہ قابلِ شان اور قابلِ اعتبار کوئی انسان لا کر دکھا دو تو میں ضرور اپنی پہلی اور آخری بیعت توڑدوں گی جو کہ سب جانتے ہیں کہ ایسا ممکن ہی نہیں.
آپ کو کوئی ہدایت کی باتیں دکھائے تو اسکی عزت کریں اسکو استاد بنائیں, وہ باتیں قرآن کے مطابق ہوں تو عمل بھی کریں مگر پیروی تو بیشک اللّہ اور اللّہ کے رسول صلٰی اللہ علیہ وسلم کی ہی فرض ہے.اس بات کے جواب میں دلیل کے طور پر لوگ کسی نہ کسی بزرگ کا حوالہ دے دیتے ہیں قرآنی آیت کو رد کر کے کوئی بھی دلیل کیسے کام آسکتی ہے, قرآن کی بات ہر بزرگ سے بلند ہے. ویسے بھی  پیغمبروں یا بزرگوں کی لکھی ہوئی باتوں کو تو کوئی بھی انسان رد و بدل کر سکتا ہے قرآن کی کوئی آیت کبھی بدل نہیں سکتی.
اللّہ ہم سب کو دنیا و آخرت میں نورِھدایت عطا فرمائے.اللھم آمیٰن یا رب اللعالمیٰن

والسلام۔ ۔مطلوبِ دعا۔۔آسیہ روبی

 

إِنَّآ أَرْسَلْنَٰكَ شَٰهِدًۭا وَمُبَشِّرًۭا وَنَذِيرًۭا
Inna arsalnaka shahidan wamubashshiran wanatheeran
بیشک ہم نے تمہیں بھیجا حاضر و ناظر اور خوشی اور ڈر سناتا
We have indeed sent you (O dear Prophet Mohammed – peace and blessings be upon him) as a present witness and a Herald of glad tidings and warnings. (The Holy Prophet is a witness from Allah.)
(48 : 8)
لِّتُؤْمِنُوا۟ بِٱللَّهِ وَرَسُولِهِۦ وَتُعَزِّرُوهُ وَتُوَقِّرُوهُ وَتُسَبِّحُوهُ بُكْرَةًۭ وَأَصِيلًا
Lituminoo biAllahi warasoolihi watuAAazziroohu watuwaqqiroohu watusabbihoohu bukratan waaseelan
تاکہ اے لوگو تم اللہ اور اس کے رسول پر ایمان لاؤ اور رسول کی تعظیم و توقیر کرو اور صبح و شام اللہ کی پاکی بولو
In order that you, O people, may accept faith in Allah and His Noble Messenger, and honour and revere the Noble Messenger; and may say the Purity of Allah, morning and evening. (To honour the Holy Prophet – peace and blessings be upon him – is part of faith. To disrespect him is blasphemy.)
(48 : 9)
إِنَّ ٱلَّذِينَ يُبَايِعُونَكَ إِنَّمَا يُبَايِعُونَ ٱللَّهَ يَدُ ٱللَّهِ فَوْقَ أَيْدِيهِمْ ۚ فَمَن نَّكَثَ فَإِنَّمَا يَنكُثُ عَلَىٰ نَفْسِهِۦ ۖ وَمَنْ أَوْفَىٰ بِمَا عَٰهَدَ عَلَيْهُ ٱللَّهَ فَسَيُؤْتِيهِ أَجْرًا عَظِيمًۭا
Inna allatheena yubayiAAoonaka innama yubayiAAoona Allaha yadu Allahi fawqa aydeehim faman nakatha fainnama yankuthu AAala nafsihi waman awfa bima AAahada AAalayhu Allaha fasayuteehi ajran AAatheeman
وہ جو تمہاری بیعت کرتے ہیں وہ تو اللہ ہی سے بیعت کرتے ہیں ان کے ہاتھوں پر اللہ کا ہاتھ ہے، تو جس نے عہد توڑا اس نے اپنے بڑے عہد کو توڑا اور جس نے پورا کیا وہ عہد جو اس نے اللہ سے کیا تھا تو بہت جلد اللہ اسے بڑا ثواب دے گا
Those who swear allegiance to you (O dear Prophet Mohammed – peace and blessings be upon him), do indeed in fact swear allegiance to Allah; Allah's Hand* of Power is above their hands; so whoever breaches his oath, has breached his own greater promise; and whoever fulfils the covenant he has with Allah – so very soon Allah will bestow upon him a great reward. (Used as a metaphor.)
(48 : 10)

Asiya Ruby

لوحِ قلم کا مقصد آپ کی حوصلہ افزائی کرنا ہی نہیں بلکہ آپ کے یقین اورسوچ کومضبوط کرنا او معلومات پہنچانا ہے آپ کی سوچ ، کامیابی ، خوشی ، راحت اور سکون تک رسائی میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔ ایک سوچ تنکے کو بھی پہاڑ بنا سکتی ہے۔ وہی سوچ ایک پہاڑ کوتنکے کی .مانند کمزوربھی بنا سکتی ہے، یعنی آپ کی اپنی سوچ ہی ممکن کو ناممکن اور ناممکن کو ممکن بنانے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ آسیہ روبی The purpose of the "LoheQalam" is not only to encourage you but also to strengthen your beliefs and thinking and to convey information The biggest obstacle is access to your thinking, success, happiness, comfort, and tranquility. One thought can turn straw into a mountain. The same thinking can make you as weak as a mountain, that is, your own thinking is capable of making the impossible possible and the impossible possible


Leave a Comment

Leave a Reply