logo-mini

مساجد میں تلاوت یا اذان دینا

مساجد میں تلاوت یا اذان دینا

السَـــــــلاَم وُ عَلَيــْــكُم و َرَحْمَةُ ﷲ وَ بَرَكـَـاتُه!

آج کا ہمارا موضوع مساجد میں اذان دینا یا تلاوت کرنا

اذان حکم ربی اور حکم رسول صلی اللہ علیہ وسلم ہے اور اذان کا احترام اتنا زیادہ ہے کہ ہر مسلم پر سننا فرض ہے،اس کا اتنا اھترام ہے کہ تلاوت بھی روک دینے کا حکم ہے

تلاوت بھی سننی فرض ہے
آج یہ بات عام دیکھنے میں آ رہی ہے کہ اذان سے اول آخر سپیکر میں درود پاک پڑھا جاتا ہے درود پاک اول آخر پڑھنا اچھی بات ہے مگر سپیکر میں پڑھنے سے یہ نقصان ہے کہ آپ پوری دلجمعی اور لگن سے اذان سن رہے ہوتے ہیں کہ دوسری مسجد میں درود پاک کی آواز آ جاتی ہے اور اذان سن نہیں پاتے اذان نہ سن سکنے کا ازالہ کون کرے گا پھر آپ اس اذان کو آواز نہ آنے کی وجہ سے دوسری مسجد کی آواز پھر سے شروع کرتے ہیں، جو تقریباً 45 منٹ تک روزانہ جاری رہتی ہیں، کسی کا اتنا بھی ایکا نہیں کہ ایک شہر میں تمام مساجد میں ایک وقت پر اذان دی جائے، اذان کے بعد تلاوت کلام پاک شروع ہوجاتی ہے،

عجب کشمکش میں رہتے ہیں کہ بیت الخلاء کیسے جائیں یا بیٹھ کر تلاوت سنیں، اور نماز قضا ہونے دیں؟؟ؕ

اب نماز بھی ادا کرتے ہوئے اسی کشمکش کا شکار ہیں کہ اسے تلاوت کو سنیں یا نماز نیت کریں
جب مساجد میں دین کے علمبردار ہی قرآن وہ درود اور اذان کے تقدس کو ملحوظ خاطر نہ رکھیں گے تو گھر گھر میں الاؤڈ اسپیکرز میں نعت لگا کر بیماروں کو یا طالب علموں کو تنگ کرنے سے کون باز آئے گا اسلام میں تو نفلی نماز تک بھی مسجد میں یا دکھاوا کر کے ادا کرنے کی بجائے گھر میں ادا کرنے کو ترجیح دیں تو ہم کس طرف جا رہے ہیں فرض نمازیں بھی زیادہ طویل پڑھانے سے امام کو منع کیا گیا حد تو یہ ہے کہ اب تہجد کی اذان بھی دی جا رہی ہے جو کہ حیرانگی کا باعث ہے بحث یہ نہیں کہ اذان سے اول آخر درود پاک پڑھنا کیسا ہے تلاوت قرآن بھی سر آنکھوں پر مگر سپیکر میں نفلی عبادت کسی کی فرض نماز میں رکاوٹ تو نہیں بن رہیں تقدس میں بھی کمی تو نہیں آ رہی صرف اس بات کو مدنظر رکھیں

آخر میں عرض ہے کہ میری بات کو غلط رنگ دینے کی کوشش نہ کی جائے، میں خود اول آخر درود ابراہیم پڑھنا افضل سمجھتی ہوں، تلاوت بھی کریں مگر سپیکر صرف اذان کے لئے استعمال کئے جائیں

دوسروں کے آرام و حقوق کا خیال کرنے سے دین و معاشرہ مضبوط ہوتا ہے۔ آسانیاں فراہم کریں، شعور سے کام لیں ہر بات میں جوش نہیں ہوش سے کام لینے کا وقت ہے

اللہ سے دعا ہے کہ ہمیں دنیا و آخرت میں نورِ ہدائت اور آسانیاں عطا فرمائے، میری اور آپکی زندگی کو کارآمد اور با مقصد بنا کر اپنی رضا عطا فرمائے۔اللھم یا رب اللعالمین
والسلام طالب دعا۔۔۔ آسیہ روبی

Asiya Ruby

لوحِ قلم کا مقصد آپ کی حوصلہ افزائی کرنا ہی نہیں بلکہ آپ کے یقین اورسوچ کومضبوط کرنا او معلومات پہنچانا ہے آپ کی سوچ ، کامیابی ، خوشی ، راحت اور سکون تک رسائی میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔ ایک سوچ تنکے کو بھی پہاڑ بنا سکتی ہے۔ وہی سوچ ایک پہاڑ کوتنکے کی .مانند کمزوربھی بنا سکتی ہے، یعنی آپ کی اپنی سوچ ہی ممکن کو ناممکن اور ناممکن کو ممکن بنانے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ آسیہ روبی The purpose of the "LoheQalam" is not only to encourage you but also to strengthen your beliefs and thinking and to convey information The biggest obstacle is access to your thinking, success, happiness, comfort, and tranquility. One thought can turn straw into a mountain. The same thinking can make you as weak as a mountain, that is, your own thinking is capable of making the impossible possible and the impossible possible


Leave a Comment

Leave a Reply