logo-mini

شبِ برات کیا ہے؟

شبِ برات کیا ہے؟

السَـــــــلاَم وُ عَلَيــْــكُم و َرَحْمَةُ ﷲ وَ بَرَكـَـاتُہ

شعبان رمضان المبارک سے پہلے آتا ہے رمضان کی خوش خبری لیتا ہوأ، اصولی طور پر تو سب کی کوشش ہونی چاہیئے کہ رمضان المبارک کے لئے خود کو تیار کر لیں نفلی روزوں اور نفلی عبادات کا اس ماہ کا اہتمام کریں، پیارے آقا رحمت اللعالمیٰن صلیٰ اللہ علیہ وسلم سب سے زیادہ نفلی روزے اسی مہینے میں رکھا کرتے تھے ، اور شبِ برات بھی اسی مہینے کے نصف میں آتی ہے جس کے متعلق جدھر دیکھو بحث سننے کو ملتی ہے، اب عبادات کو بھی زیرِ بحث لایا جائے گا؟ کوئی کہتا ہے کہ یہ مغفرت اور عبادت کی  رات ہے، کوئی اس رات کو عبادت اور روزہ کے لئے خاص کرنا جہالت ، بدعت کہتا ہے، اس سے متعلق حدیث کوحدیثِ ضعیف کہتا ہے۔ یہ کیسی عجیب و غریب بحث ہے؟؟؟

میں مانتی ہوں کہ یہ واضح کرنا لازم ہے کہ یہ حدیث ضعیف ہے، ضعیف حدیث ہی سہی، رات بھرعبادت کرنا، روزہ رکھنا کب سے بدعت ہوئے؟ سال بھر میں کونسی رات ہے جس میں اللہ تعالیٰ نے عبادت کرنے کو منع فرمایا؟ نفلی عبادت اور روزوں، توبہ، دعا اور عبادت کے لئے رات بھر جاگنا نیکیوں کا ذریعہ ہوأ یا جہالت اور بدعت؟؟؟؟

ہاں چراغاں کرنا، یا کوئی بھی رسم پالنا اور اسکو حدیث بتانا گناہ ہے۔ خاص طور پر شبِ برات پر بیٹیوں کو یا بہو کو شبِ برات دے کر آنے کی رسم سب سے زیادہ غلط ہے۔ سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ اگر یہ مغفرت اور عبادت کی رات ہے تو یہ رسم کا اس دِن کیا مطلب؟ عید خوشی کا دِن ہے اور ہمارا اسلامی تہوار جس پر گفٹ دینے بنتے ہیں، مگراس رات کا مطلب کیا ہے کوئی پکوان پکا کر بانٹتا ہے، تو کوئی اس رسم کو نبھانے کے لئے مشکل اٹھاتا ہے، کوئی آگ سے کھیلتا ہے، کوئی چراغاں کرتا ہے،پھر ایک اورغلط عقیدہ بھی پالا جاتا ہے کہ آسمان پر درخت ہے جس پر ہر انسان کے نام کا پتہ لگا ہوا ہے شب برات کی رات کو جس جس کے نام کا پتہ گرے گا وہ اس سال مر جائے گا, عجیب بات ہے جب قرآن میں واضح کر دیاکہ ہماری موت کا وقت ہماری پیدائش کے ساتھ ہی مقرر کر دیا جاتا ہے تو پھر مسلم ہو کر کوئی اس حقیقت کو کیسے جھٹلا سکتا ہے؟؟؟؟ پھراپنے رشتہ دار مردوں کی قبروں پر اس دن جاتےہیں اور انکے پسندیدہ پکوان پکا کر ختم دلاتے ہیں اور کہتے ہیں کہ اس رات سب ارواح اپنے گھر والوں سے ملنے آتی ہیں. مرنے کے بعد ارواح کا دنیا سے کیا تعلق؟؟؟قرآن میں جو بات بھی واضح کر دی گئی ہےاس کے خلاف کسی بات پر یقین کرنا اس بات کو جھٹلانا ہے اور قرآن کی کسی بھی بات کو جھٹلانا کسی مسلم کا کام نہیں. یقین کرنا ہے تو ہر بات ہر آیت کاکریں ورنہ کسی بات پر بھی نہ کریں۔ یہ سب ایک دنِ کے حوالے سے؟ْ؟ اتنے رنگ ؟؟؟ اتنے مطلب اس ایک رات کے حوالے سے؟؟؟؟ یا ہم مطلب سمجھنے اور جاننے کی کوشش ہی نہیں کرتے، بھئی دنیا بھر کے فضول کاموں کا ہمارے پاس ٹائم ہوتا ہے ان فضول کاموں اور رسموں کو نبھانے کے لئے اتنا وقت اور پیسہ صرف کر سکتے ہیں مگر یہ سوچنے کا ٹائم نہیں کہ ان رسموں کا کیا مطلب؟؟؟؟ کس موقعہ پر کونسی رسمیں؟؟ آپس کی فرقہ بندیوں میں اتنا کھو جاتے ہیں کہ ایک دوسرے کو کافر، مرتد، جاہل، بدعت نجانے کیا کیا کہتے چلے جاتے ہیں، ایک فرقہ عبادت کو ہی غلط کہہ کر گناہگار ہوتا ہے تو دوسرا چراغاں ، آتش بازی، اور نجانے کون کونسی رسومات کو اپنا کر زیادہ گناہ کماتا ہے۔ یہ تو ہر کوئی جانتا ہے کہ آگ سے کھیلنا شیطانی عمل ہے، مگر اسکے باوجود اکثریت ایسی سمجھدار ماؤں کی ہے جو اپنے بچوں کو خود ہی موت کا سامان خریدنے کے لئے پیسے دیتیں ہیں اور کہتی ہیں جاؤ میرا بیٹا پٹٓاخے پھوڑو، چاہے ساتھ میں کسی کا بھی سر پھوڑ کر آجائے، حد تو یہ ہے کہ جو افورڈ نہیں کر سکتیں وہ روتی ہیں کہ ہائے میرا بچہ بیچارہ پٹاخے بھی نہیں خرید سکتا، یہ کیسا تہوار آیا ہے جو میرا بچہ نہیں منا سکتا، کبھی بندوق کھلونا نما خرید کر دیں گی، جب وہ بڑے ہو کر اسی راہ پر نکلتے ہیں تو یہی مائیں اپنے نصیب کو کوستی رہ جاتی ہیں

حیرانگی کی بات ہے کہ ایک طرف اس رات کو نامہ اعمال کی تبدیلی کی رات کہا جاتا ہے، کہ رجسٹر بند ہو رہے  ہیں موت کا دن مقرر ہو رہا ہے تو دوسری طرف اس رات کو تہوار کہہ کر ہندوؤں کی طرح منا کر مزید گناہگار ہوتے ہیں، اور بچوں کو بھی غلط راہ دکھاتے ہیں، پھر سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ آخر یہ رات ہے کیا؟؟؟؟؟؟؟

رہی بات عبادت کی تو میرے نزدیک تو یہ رات کو سنت سمجھ کر حدیثِ ضعیف کے حوالے سے ہی سہی عبادت اور مغفرت کا موقعہ ہاتھ سے مت جانے دیں، بحث کو چھوڑیں غیر مذاہب کے لوگوں کو خود پر ہنسنے کا موقعہ مت دیں، ہر فرقہ حد سے تجاوز کر جاتا ہےاسی لئے اسلام کسی فرقے کو نہیں مانتا، بہرحال آپ اگر اپنے فرقے کو چھوڑنا نہیں چاہتے تو کم از کم حد سے تجاوز کرنا تو ختم کر سکتے ہیں یا نہیں؟؟؟

ہر فرقہ حد میں رہ کر کام کرے تو یہ لڑائی جھگڑے ختم یا کم ہو سکتے ہیں، اور مسلم قوم آپس میں اتحاد پیدا کر کے دشمن سے مقابلہ کرے نہ کہ آپس میں خانہ جنگی کر کے اپنے ہی بہن، بھائیوں سے دشمنی نبھاتے چلے جارہے ہیں۔ ہر فرقہ سے تعلق رکھنے والا خود کو ٹھیک سمجھتا ہے اور دوسرے کو کافر، کوئی بھی کسی دوسرے کی بات یا دلیل کو سننا برداشت نہیں کرتا، چاہے کیسی بھی ہدائت کی بات کیوں نہ ہو۔

خدارا فرقوں اور عقیدوں میں اتنا مت کھو جایئں کہ آر پار روشنی یا ہدائت کو دیکھنا ہی نہ چاہیں۔ کیونکہ عقیدہ رکھنا غلط نہیں، مگر عقیدے کو لے کر کبھی بھی اتنے سخت مت ہو جائیں کہ آر پار حقیقت بھی دکھائی نہ دے سکے، بلکہ ٹھنڈے دل و دماغ سے  فریق کی بات سنیں اور سنایئں، پھر فریق چاہے کسی بھی مذہب سے متعلق ہو، نرم لہجہ اور مضبوط دلائل دے کر سمجھائیں، آگے ہدائت ملنا یا نہ ملنا اللہ تعالیٰ کی طرف سے ہے، پیغمبروں کے چاہنے سے بھی ہدائت صرف اس نے پائی، جس کو اللہ تعالیٰ نے چاہا۔

اللہ تعالیٰ ہم سب کو خاص طور پر مجھے اور میرے والدین کو اور میرے بچوں کو نورِ ہدائت اور اعمالِ صالحہ کی توفیق عطا فرمائے۔اللھم آمیٰن یا رب اللعالمین

والسلام۔ ۔مطلوبِ دعا۔۔آسیہ روبی

وَٱعْتَصِمُوا۟ بِحَبْلِ ٱللَّهِ جَمِيعًۭا وَلَا تَفَرَّقُوا۟ ۚ وَٱذْكُرُوا۟ نِعْمَتَ ٱللَّهِ عَلَيْكُمْ إِذْ كُنتُمْ أَعْدَآءًۭ فَأَلَّفَ بَيْنَ قُلُوبِكُمْ فَأَصْبَحْتُم بِنِعْمَتِهِۦٓ إِخْوَٰنًۭا وَكُنتُمْ عَلَىٰ شَفَا حُفْرَةٍۢ مِّنَ ٱلنَّارِ فَأَنقَذَكُم مِّنْهَا ۗ كَذَٰلِكَ يُبَيِّنُ ٱللَّهُ لَكُمْ ءَايَٰتِهِۦ لَعَلَّكُمْ تَهْتَدُونَ
WaiAAtasimoo bihabli Allahi jameeAAan wala tafarraqoo waothkuroo niAAmata Allahi AAalaykum ith kuntum aAAdaan faallafa bayna quloobikum faasbahtum biniAAmatihi ikhwanan wakuntum AAala shafa hufratin mina alnnari faanqathakum minha kathalika yubayyinu Allahu lakum ayatihi laAAallakum tahtadoona
اور اللہ کی رسی مضبوط تھام لو سب مل کر اور آپس میں پھٹ نہ جانا (فرقوں میں نہ بٹ جانا) اور اللہ کا احسان اپنے اوپر یاد کرو جب تم میں بیر تھا اس نے تمہارے دلوں میں ملاپ کردیا تو اس کے فضل سے تم آپس میں بھائی ہوگئے اور تم ایک غار دوزخ کے کنارے پر تھے تو اس نے تمہیں اس سے بچادیا اللہ تم سے یوں ہی اپنی آیتیں بیان فرماتا ہے کہ کہیں تم ہدایت پاؤ،
And hold fast to the rope of Allah, all of you together, and do not be divided; and remember Allah's favour on you, that when there was enmity between you, He created affection between your hearts, so due to His grace you became like brothers to each other; and you were on the edge of a pit of fire (hell), so He saved you from it; this is how Allah explains His verses to you, so that you may be guided.
(3 : 103)
فَرِيقًا هَدَىٰ وَفَرِيقًا حَقَّ عَلَيْهِمُ ٱلضَّلَٰلَةُ ۗ إِنَّهُمُ ٱتَّخَذُوا۟ ٱلشَّيَٰطِينَ أَوْلِيَآءَ مِن دُونِ ٱللَّهِ وَيَحْسَبُونَ أَنَّهُم مُّهْتَدُونَ
Fareeqan hada wafareeqan haqqa AAalayhimu alddalalatu innahumu ittakhathoo alshshayateena awliyaa min dooni Allahi wayahsaboona annahum muhtadoona
ایک فرقے کو راہ دکھائی اور ایک فرقے کو گمراہی ثابت ہوئی انہوں نے اللہ کو چھوڑ کر شیطانوں کو والی بنایا اور سمجھتے یہ ہیں کہ وہ راہ پر ہیں،
He has guided one group, and one group's error has been proved; instead of Allah, they have chosen the devil as their friend and they assume that they are on guidance!
(7 : 30)

 

Asiya Ruby

آؤ اللہ کی رسی کو مل کر تھام لیں Our all posts are researched carefully and designed by us. قرآن سمجھنے والے کبھی فرقہ نہیں بن سکتے اور فرقہ بننے والے کبھی قران نہیں سمجھ سکتے


Leave a Comment

Leave a Reply