logo-mini

بچے کو مارنا مناسب یا نہیں؟

  1. آج کل کی مائیں اپنے بچوں کو مار کر یا ڈانٹ کر سمجھانے کے حق میں ہیں۔ آئیے دیکھتے ہیں کہ کیا یہ طریقہ درست ہے یا نہیں۔

ایک دفعہ میری دوست کا بھائ جسکو سگریٹ کی لت پڑ گئ۔حالانکہ اس کی عمر ابھی صرف سات یا آٹھ سال تھی۔ اس کے گھر والوں کو خبر ہوئ تو اس کی والدہ نے اس کو بجائے سمجھانے کے اس کو آگ دکھا کر گرم چمچہ اس کی زبان کو لگایا۔وہ معصوم جس کو ابھی صحیح اور غلط کا فرق بھی معلوم نہ تھا، رویا گڑگڑایا۔معافی مانگنے پر ماں نے ڈراڈر دھمکا کر چھوڑ دیا۔ ادھر سے جان چھوٹتے ہی اس لڑکے نے جانتے ہیں کیا کیا؟۔۔۔ اس نے گھر سے نکل کر سب سے پہلا کام یہی کیا کہ سگریٹ کے کش لگائے۔۔۔

اب آج کی مائیں مجھے جواب دیں کہ کون سدھرا اس مار یا ڈراوے سے؟

ہم مارتے اپنے بچوں کو نہیں ہیں۔بلکہ ان کے دماغ کو مار رہے ہوتے ہیں۔ ان سے پیار سے بات منوانا ہمارا کام ہے۔ ہم ان کو یہ سیکھ دے رہے ہوتے ہیں کہ اگر آپ کی بات نہ مانی جائے تو آپ مارو یا ڈانٹو۔تقریباً سو سال ہو گئے مغرب والوں نے بچوں کو مارنے پر پابندی لگا دی ہے۔شاید یہی وجہ ہے کہ کتنےترقییافتہ ممالک میں آج پولیس کا نظام ہے ہی نہیں جیسے

آیسلینڈ اور موناکو۔

اللّہ اور اس کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے بھی ہمیں بچوں کے ساتھ نرمی سے پیش آنے کی ہی تعلیم دی ہے۔

منہ پر مارنا یا اس طرح مارنا کہ زخم آئے یا بچہ دس سال سے چھوٹا ہو۔اس سے اسلام میں سختی سے منع فرمایا گیا ہے۔اس کے بھی کچھ اصول ہیں۔جو درج ذیل ہیں۔

یہ صرف آخری حربے کے طور پر کیا جانا چاہئے جب باقی دیگر تمام طریقوں میں ناکامی نظر آئے

یہ کبھی کبھار ہی کرنا ضروری ہے، کیونکہ اس کی ضرورت کبھی ہی ہوتی ہے. زیادہ اوقات، سخت زبانی انتباہ کا کام کرتی ہے

 یہ نجی میں ہونا ضروری ہے اور نہ کہ کسی کے سامنے اس طرح کے اپنے دوستوں یا رشتےداروں اور دوسروں کے سامنے بچے کی خود اعتمادی اور عزت  کی حفاظت کرنا سیکھیں۔

 اللہ کی رضا کے لیے بچے کو نظم و ضبط کے ارادے سے یہ کرنا ضروری ہے

 

یہ بچے کے لئے دل میں مکمل رحم رکھ کر اور کسی بھی نفرت سے عاری ہو کر کرنا ہوگا

رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم نے فرمایا: “اپنے بچوں کو نماز سکھاؤ جب وہ سات سال کی عمر میں ہوں، اور ان کو ہلکا پھلکا کہیں تو اگر وہ 10 سال کی عمر میں نماز ادا نہیں کرتے اور انہیں اپنے بستروں میں الگ کردیں.(ابو داؤد (459) اور احمد (6650)، الہراہ البانیہ (247)

اللہ تعالی ہم سب کو ہدایت دے۔ آمین۔

 

Umme Yahya

Article writer. Masters in English. Content writer.


3 comments

  • بہت خوب۔ عمدہ تحریر

  • Ma Sha Allah, bohat achi tehreer hai, Jazak Allah ul Khair kasiran kasira, and welcome here

    • Umme Yahya-
    • September 26, 2018 at 1:27 am-
    • Reply

    Thank a lot for this compliment. JazakaAllah khairan kaseeran

Leave a Comment

Leave a Reply