logo-mini

اولاد نعمت یا زحمت

اولاد نعمت یا زحمت

!السَـــــــلاَمُ عَلَيــْــكُم وَرَحْمَةُ ﷲ وَبَرَكـَـاتُہ
قرآن کریم میں اولاد کو نعمت بھی بتایا ہے اور فتنہ بھی

اک چیز جو نعمت ہے وہ فتنہ یا آزمائش کیسے بن جاتی ہے

اکثر لوگوں کی ساری جدوجہد مال کمانے کے لیے ہے اور وہ کس لیے؟

اپنی اولاد کو بہتر مستقبل دینے کے لیے؟

مگر مستقبل سے مراد اسکی دنیا کی کامیابی ہی ہوتا ہے اچھی تعلیم اچھی جاب بڑے گھر میں شادی، بہترین گھر اور بہترین گاڑی اور اسکے لیے حلال اور حرام دونوں طریقے اختیار کرتا ہے آپ رشوت لینے والے سے پوچھو بھائی رشوت کیوں لیتے ہو؟ جواب ملتا ہے بچوں کو پڑھانا لکھانا ہے مگر وہ بھول جاتا ہے جو اولاد حرام مال پر پلتی ہے وہ اچھی اولاد ثابت نہیں ہوتی تو اولاد اور مال دونوں آزمائش بن جائیگی آپکو جہنم تک پہچانے والی وہ اولاد جسکی آپ نے خوشی منائی یوم قیامت وہ اولاد اور مال عذاب ہوگا

مگر جسکو االلّه نے مال بھی دیا اور اولاد بھی دی اسکو حرام لینے کی ضرورت ہی نہیں مگر مال اس نے صرف اپنے لیے رکھا اور حقداروں کو نہ پہچایا, اب حقدار کون ہیں؟

سورہ البقرہ میں پوچھا گیا مال کس پر خرچ کریں؟

تو جواب ملا ماں باپ پر ، یتیم پر ، مساکین پر ، مسافر پر ، اولاد کا نام اسلیے نہ لیا گیا کہ آدمی کچھ بھی کرے اولاد کے لیے کرتا ہے ماں باپ کی یاد دہانی اس لیے کی گئی آدمی کہتا ہے اب ماں باپ بوڑھے ہیں ان کی کیا خواہشات ہونگی دو جوڑے کپڑے اور تین وقت کی روٹی ، یا حد سے حد دوائی کافی ہے اور وہ ان پر کھلے دل سے اس طرح خرچ نہیں کرتا، جیسا وہ اپنی اولاد پر کرتا ہے,

حالانکہ انہوں نے اپنی جوانی اور مال ان بچوں کو بہتر سے بہتر دینے کی خاطر قربان کردیا، اس لئے ان پر خرچ کرنے کا اللہ نے خاص کر حکم دیا، کیونکہ اب وہ ان باتوں کے زیادہ ضرورت مند ہیں

بیشک اولاد اور بیوی پر لازم خرچ کرے مگر اسکے ساتھ ساتھ باقی حقداروں کو بھی نہ بھولیں,

مساکین اور یتیم کا حق، روڈ پر خیرات دینے سے ادا نہیں ہو جاتا, باقاعدہ ہر ماہ انکا وظیفہ دینا چاہئے تاکہ انکی تعلیم کا سلسلہ چل سکے انکے گھر کا چولھا جل سکے اگر ایسا نہ کیا تو وہ مال بھی فتنہ ہوگا,

اللّہ کی راہ میں دینے والا مال سوچ کر خرچ کرنا چاہئے , یہ مستحق لوگوں کی ہمارے مال میں ہمیں اللّہ پاک کی طرف سے ملنے والی امانت ہوتی ہے.
“اور انکے مال میں حق تھا, سائلوں اور محروموں کا”.
سورۃ الذاریات

اولاد کی پرورش دنیا کے ساتھ دین کے لیے بھی کریں, اولاد کی محبت میں غلط اور صحیح کی پہچان مت بھولیں, اولاد کی محبت میں کسی کے بھی ساتھ ناانصافی نہ کریں, دوسروں کی اولاد کا بھی خیال کریں کہ فرد سے معاشرہ تشکیل پاتا ہے, یتیم کے سامنے اپنی اولاد کو پیار نہ کریں، نہ ہی غریب و یتیم بچوں کے سامنے نمائش کریں، اپنی اولاد کو بھی یہی سکھائیں، بہترین انسان اور بہترین شہری بنائیں, ایسی اولاد آپکے لئے صدقہ جاریہ ہوگی اور ایسی اولاد نعمت ہوگی. یاد رکھیں روزِ حشر آپکی اولاد کی تربیت کا آپ سے سوال ہوگا, بلکہ سب جانتے ہیں کہ دنیا میں بھی کسی کے کردار کو دیکھ کر اسکے خاندان اور تربیت کا پتہ چلتا ہے اور اسکی تربیت کو ہی سراہا جاتا ہے

لیکن اکثر لوگوں کی ساری جدوجہد دنیا کی زندگی ہی میں گم ہو کر رہ جاتی ہے ۔ یعنی انہوں نے جو کچھ بھی کیا اللہ سے بے نیاز اور آخرت سے بے فکر ہو کر صرف دنیا کے لیے کیا ۔ دنیاوی زندگی ہی کو ہی اصل زندگی سمجھا ۔ دنیا کی کامیابیوں اور خوشحالی ہی کو اپنا مقصود بنایا ۔ اللہ کی ہستی کے اگر قائل ہوئے بھی تو اس بات کی کبھی فکر نہ کی کہ اس کی رضا کیا ہے اور ہمیں کبھی اس کے حضور جا کر اپنے اعمال کا حساب بھی دینا ہے ۔ اپنے آپ کو محض ایک خود مختار و غیر ذمہ دار عقلمند حیوان سمجھتے رہے ، جن کو ہمیشہ رہنے والی اخروی زندگی کے لئے کوئی اجر و ثواب کی فکر نہیں۔
اللّہ تعالٰی ہمیں اپنے والدین کے لئے اور ہماری اولاد کو ہمارے لئے صدقہ جاریہ بنائے. اللھم آمیٰن یا رب اللعالمیٰن۔

والسلام۔ ۔مطلوبِ دعا۔۔آسیہ روبی

وَٱعْلَمُوٓا۟ أَنَّمَآ أَمْوَٰلُكُمْ وَأَوْلَٰدُكُمْ فِتْنَةٌۭ وَأَنَّ ٱللَّهَ عِندَهُۥٓ أَجْرٌ عَظِيمٌۭ
WaiAAlamoo annama amwalukum waawladukum fitnatun waanna Allaha AAindahu ajrun AAatheemun
اور جان رکھو کہ تمہارے مال اور تمہاری اولاد سب فتنہ ہے اور اللہ کے پاس بڑا ثواب ہے
And know that your wealth and your children are a test, and that with Allah is an immense reward.
(8 : 28)
إِنَّمَآ أَمْوَٰلُكُمْ وَأَوْلَٰدُكُمْ فِتْنَةٌۭ ۚ وَٱللَّهُ عِندَهُۥٓ أَجْرٌ عَظِيمٌۭ
Innama amwalukum waawladukum fitnatun waAllahu AAindahu ajrun AAatheemun
تمہارے مال اور تمہارے بچے جانچ ہی ہیں اور اللہ کے پاس بڑا ثواب ہے
Your wealth and your children are just a test; and with Allah is a tremendous reward.
(64 : 15)
فَٱتَّقُوا۟ ٱللَّهَ مَا ٱسْتَطَعْتُمْ وَٱسْمَعُوا۟ وَأَطِيعُوا۟ وَأَنفِقُوا۟ خَيْرًۭا لِّأَنفُسِكُمْ ۗ وَمَن يُوقَ شُحَّ نَفْسِهِۦ فَأُو۟لَٰٓئِكَ هُمُ ٱلْمُفْلِحُونَ
Faittaqoo Allaha ma istataAAtum waismaAAoo waateeAAoo waanfiqoo khayran lianfusikum waman yooqa shuhha nafsihi faolaika humu almuflihoona
تو اللہ سے ڈرو جہاں تک ہوسکے اور فرمان سنو اور حکم مانو اور اللہ کی راہ میں خرچ کرو اپنے بھلے کو، اور جو اپنی جان کے لالچ سے بچایا گیا تو وہی فلاح پانے والے ہیں،
Therefore fear Allah as much as possible, and heed the commands, and obey, and spend in Allah's cause, for your own good; and whoever is rescued from the greed of his own soul – is they who will be successful.
(64 : 16)
وَٱلَّذِينَ يَقُولُونَ رَبَّنَا هَبْ لَنَا مِنْ أَزْوَٰجِنَا وَذُرِّيَّٰتِنَا قُرَّةَ أَعْيُنٍۢ وَٱجْعَلْنَا لِلْمُتَّقِينَ إِمَامًا
Waallatheena yaqooloona rabbana hab lana min azwajina wathurriyyatina qurrata aAAyunin waijAAalna lilmuttaqeena imaman
اور وہ جو عرض کرتے ہیں، اے ہمارے رب! ہمیں دے ہماری بیبیوں اور اولاد سے آنکھوں کی ٹھنڈک اور ہمیں پرہیزگاروں کا پیشوا بنا
And who submit, "Our Lord, soothe our eyes with our wives and our children, and make us leaders of the pious."
(25 : 74)
إِنَّ ٱلَّذِينَ كَفَرُوا۟ لَن تُغْنِىَ عَنْهُمْ أَمْوَٰلُهُمْ وَلَآ أَوْلَٰدُهُم مِّنَ ٱللَّهِ شَيْـًۭٔا ۖ وَأُو۟لَٰٓئِكَ هُمْ وَقُودُ ٱلنَّارِ
Inna allatheena kafaroo lan tughniya AAanhum amwaluhum wala awladuhum mina Allahi shayan waolaika hum waqoodu alnnari
بیشک وہ جو کافر ہوئے ان کے مال اور ان کی اولاد اللہ سے انہیں کچھ نہ بچاسکیں گے اور وہی دوزخ کے ایندھن ہیں،
Indeed for those who disbelieve, neither their wealth nor their offspring will help to save them in the least from Allah; and it is they who are fuel for the fire.
(3 : 10)
وَإِذْ أَخَذْنَا مِيثَٰقَ بَنِىٓ إِسْرَٰٓءِيلَ لَا تَعْبُدُونَ إِلَّا ٱللَّهَ وَبِٱلْوَٰلِدَيْنِ إِحْسَانًۭا وَذِى ٱلْقُرْبَىٰ وَٱلْيَتَٰمَىٰ وَٱلْمَسَٰكِينِ وَقُولُوا۟ لِلنَّاسِ حُسْنًۭا وَأَقِيمُوا۟ ٱلصَّلَوٰةَ وَءَاتُوا۟ ٱلزَّكَوٰةَ ثُمَّ تَوَلَّيْتُمْ إِلَّا قَلِيلًۭا مِّنكُمْ وَأَنتُم مُّعْرِضُونَ
Waith akhathna meethaqa banee israeela la taAAbudoona illa Allaha wabialwalidayni ihsanan wathee alqurba waalyatama waalmasakeeni waqooloo lilnnasi husnan waaqeemoo alssalata waatoo alzzakata thumma tawallaytum illa qaleelan minkum waantum muAAridoona
اور جب ہم نے بنی اسرائیل سے عہد لیا کہ اللہ کے سوا کسی کو نہ پوجو اور ماں باپ کے ساتھ بھلائی کرو، اور رشتہ داروں اور یتیموں اور مسکینوں سے اور لوگوں سے اچھی بات کہو اور نماز قائم رکھو اور زکوٰة دو پھر تم پھِر گئے مگر تم میں کے تھوڑے اور تم رد گردان ہو-
And (remember) when We took a covenant from the Descendants of Israel that, "Do not worship anyone except Allah; and be good to parents, relatives, orphans and the needy, and speak kindly to people and keep the prayer established and pay the charity"; thereafter you retracted, except some of you; and you are those who turn away.
(2 : 83)
قُلْ تَعَالَوْا۟ أَتْلُ مَا حَرَّمَ رَبُّكُمْ عَلَيْكُمْ ۖ أَلَّا تُشْرِكُوا۟ بِهِۦ شَيْـًۭٔا ۖ وَبِٱلْوَٰلِدَيْنِ إِحْسَٰنًۭا ۖ وَلَا تَقْتُلُوٓا۟ أَوْلَٰدَكُم مِّنْ إِمْلَٰقٍۢ ۖ نَّحْنُ نَرْزُقُكُمْ وَإِيَّاهُمْ ۖ وَلَا تَقْرَبُوا۟ ٱلْفَوَٰحِشَ مَا ظَهَرَ مِنْهَا وَمَا بَطَنَ ۖ وَلَا تَقْتُلُوا۟ ٱلنَّفْسَ ٱلَّتِى حَرَّمَ ٱللَّهُ إِلَّا بِٱلْحَقِّ ۚ ذَٰلِكُمْ وَصَّىٰكُم بِهِۦ لَعَلَّكُمْ تَعْقِلُونَ
Qul taAAalaw atlu ma harrama rabbukum AAalaykum alla tushrikoo bihi shayan wabialwalidayni ihsanan wala taqtuloo awladakum min imlaqin nahnu narzuqukum waiyyahum wala taqraboo alfawahisha ma thahara minha wama batana wala taqtuloo alnnafsa allatee harrama Allahu illa bialhaqqi thalikum wassakum bihi laAAallakum taAAqiloona
تم فرماؤ آؤ میں تمہیں پڑھ کر سناؤں جو تم پر تمہارے رب نے حرام کیا یہ کہ اس کا کوئی شریک نہ کرو اور ماں باپ کے ساتھ بھلائی کرو اور اپنی اولاد قتل نہ کرو مفلسی کے باعث، ہم تمہیں اور انہیں سب کو رزق دیں گے اور بے حیائیوں کے پاس نہ جاؤ جو ان میں کھلی ہیں اور جو چھپی اور جس جان کی اللہ نے حرمت رکھی اسے ناحق نہ مارو یہ تمہیں حکم فرمایا ہے کہ تمہیں عقل ہو
Say, "Come – so that I may recite to you what your Lord has forbidden for you that ‘Do not ascribe any partner to Him and be good to parents; and do not kill your children because of poverty; We shall provide sustenance for all – you and them; and do not approach lewd things, the open among them or concealed; and do not unjustly kill any life which Allah has made sacred; this is the command to you, so that you may have sense.'
(6 : 151)
زُيِّنَ لِلنَّاسِ حُبُّ ٱلشَّهَوَٰتِ مِنَ ٱلنِّسَآءِ وَٱلْبَنِينَ وَٱلْقَنَٰطِيرِ ٱلْمُقَنطَرَةِ مِنَ ٱلذَّهَبِ وَٱلْفِضَّةِ وَٱلْخَيْلِ ٱلْمُسَوَّمَةِ وَٱلْأَنْعَٰمِ وَٱلْحَرْثِ ۗ ذَٰلِكَ مَتَٰعُ ٱلْحَيَوٰةِ ٱلدُّنْيَا ۖ وَٱللَّهُ عِندَهُۥ حُسْنُ ٱلْمَـَٔابِ
Zuyyina lilnnasi hubbu alshshahawati mina alnnisai waalbaneena waalqanateeri almuqantarati mina alththahabi waalfiddati waalkhayli almusawwamati waalanAAami waalharthi thalika mataAAu alhayati alddunya waAllahu AAindahu husnu almaabi
لوگوں کے لئے آراستہ کی گئی ان خواہشوں کی محبت عورتوں اور بیٹے اور تلے اوپر سونے چاندے کے ڈھیر اور نشان کئے ہوئے گھوڑے اور چوپائے اور کھیتی یہ جیتی دنیا کی پونجی ہے اور اللہ ہے جس کے پاس اچھا ٹھکانا
Beautified is for mankind the love of these desires – women, and sons, and heaps of gold and piled up silver, and branded horses, and cattle and fields; this is the wealth of the life of this world; and it is Allah, with Whom is the excellent abode.
(3 : 14)
وَمَآ أَمْوَٰلُكُمْ وَلَآ أَوْلَٰدُكُم بِٱلَّتِى تُقَرِّبُكُمْ عِندَنَا زُلْفَىٰٓ إِلَّا مَنْ ءَامَنَ وَعَمِلَ صَٰلِحًۭا فَأُو۟لَٰٓئِكَ لَهُمْ جَزَآءُ ٱلضِّعْفِ بِمَا عَمِلُوا۟ وَهُمْ فِى ٱلْغُرُفَٰتِ ءَامِنُونَ
Wama amwalukum wala awladukum biallatee tuqarribukum AAindana zulfa illa man amana waAAamila salihan faolaika lahum jazao alddiAAfi bima AAamiloo wahum fee alghurufati aminoona
اور تمہارے مال اور تمہاری اولاد اس قابل نہیں کہ تمہیں ہمارے قریب تک پہنچائیں مگر وہ جو ایمان لائے اور نیکی کی ان کے لیے دُونا دُوں (کئی گنا) صلہ ان کے عمل کا بدلہ اور وہ بالاخانوں میں امن و امان سے ہیں
And your wealth and your children are not capable of bringing you near to Us, but one who believes and did good deeds (is brought close); for them is double the reward – the recompense of their deeds and they are in high positions, in peace.
(34 : 37)
يَٰٓأَيُّهَا ٱلَّذِينَ ءَامَنُوا۟ لَا تُلْهِكُمْ أَمْوَٰلُكُمْ وَلَآ أَوْلَٰدُكُمْ عَن ذِكْرِ ٱللَّهِ ۚ وَمَن يَفْعَلْ ذَٰلِكَ فَأُو۟لَٰٓئِكَ هُمُ ٱلْخَٰسِرُونَ
Ya ayyuha allatheena amanoo la tulhikum amwalukum wala awladukum AAan thikri Allahi waman yafAAal thalika faolaika humu alkhasiroona
اے ایمان والو تمہارے مال نہ تمہاری اولاد کوئی چیز تمہیں اللہ کے ذکر سے غافل نہ کرے اور جو ایسا کرے تو وہی لوگ نقصان میں ہیں
O People who Believe! May not your wealth or your children cause you to neglect the remembrance of Allah; and whoever does this – so it is they who are in a loss.
(63 : 9)

Asiya Ruby

آؤ اللہ کی رسی کو مل کر تھام لیں Our all posts are researched carefully and designed by us. قرآن سمجھنے والے کبھی فرقہ نہیں بن سکتے اور فرقہ بننے والے کبھی قران نہیں سمجھ سکتے


Leave a Comment

Leave a Reply