logo-mini

امتی بننا سب سے بڑی سعادت

امتی سب سے بڑی سعادت

اَلسَلامُ و عَلَيْكُم وَرحْمَةُ اﷲ وَبَرَكاتُہ

میرے مسلمان بہن اور بھائیو!
اپنے امتی ہونے کی قدر کو پہچانو، اور دوسرے ہر امتی کی بھی قدر کرو، یہی نعمت آپ کی ہر شکایت اور کمی کو پوری کرنے کے لئے کافی ہے۔ شکر ادا کرو کہ ہم امتی ہیں جس امت کی بخشش کی خاطر تمام جہانوں کی ہر جاندار و بے جان کے لئے رحمت بنا کر بھیجے جانے والے رحمت اللعالمیٰن ﷺ ، سردار الانبیاء ﷺ اس قدر رو رو کر، بلک بلک کر دعائیں کرتے رہے، مشقت اٹھاتے رہے

کیا جانیں گے ہم امتی ہونے کی اہمیت کو؟؟ کہ

ہمارا شمار اس بہترین امت سے ہے جس میں شامل ہونے کی خاطر حضرت عیسیٰ علیہ السلام نے پیغمبر ہوتے ہوئے بھی امتی بننے کی خواہش اور دعا کی

امتی وہ ہے جو میرے آقا رحمت اللعالمیٰن ﷺ کی روزِ حشر سات سو مرتبہ “مانگو کیا چاہئے” پوچھے جانے پر سات سو بار میں سے ایک بار بھی اپنا یا اپنی ازواج، اولاد یا کسی عزیز کا نہیں، صرف امتی کا ہی سوال دہرایا گیا

امتی وہ ہے جس کی بخشش کی فکر میرے آقا رحمت اللعالمیٰن ﷺ کو وصال کے وقت بھی ستاتی رہی،

وصال کے بعد کے لئے بھی وصیت فرمائی حضرت اویس قرنی رضی اﷲ عنہ سے دعا کے لئے

امتی وہ ہے جس کی موت کی سختی کی فکر میں میرے آقا رحمت اللعالمیٰن ﷺ نے جبرائیل علیہ السلام کو وہ سختی خود پر جھیلنی کی خواہش کی

امتی وہ ہے جو میرے آقا رحمت اللعالمیٰن ﷺ کی اپنے چہیتے بیٹے کی وفات پر بیحد رنجیدہ ہونے پر بھی ہر پیغمبر کی اپنے لئے ایک دعا کی اجازت کو بھی اِس امت پر قربان کردیا

امتی وہ ہے جس کی دعا اور فکر میرے آقا رحمت اللعالمیٰن ﷺ کو اپنے عزیزوں سے پہلے اور زیادہ رہی

روز حشر جب سب کو صرف اپنی فکر ہوگی وہاں بھی رحمت اللعالمین حضرت محمّد صلی اﷲ علیہ وآلہ وسلم اس امت کی فکر کی خاطر سجدے میں گر کر روئیں گے۔ سبحان اﷲ

سوچئے ضرور اس بات کو کہ ہم امت کتنی فکر کر رہے ہیں کتنی قدر کر رہے ہیں ان عظیم ترین قیمتی ترین آنسوؤں کی

ہم اس دین سے ہیں جس کے ماننے والوں سے اﷲ تعالیٰ ایک ماں سے بھی نجانے کتنے گنا زیادہ پیار کرتا ہے، (ستر گنا کنفرم حدیث نہیں، شاید اس سے زیادہ ہو ، اﷲ عالم)

اور یقین سے مانگا کرو، مایوسی اور اداسی کو قریب نہ آنے دو کامل یقین سے مانگا کرو کہ اﷲ واحد معبود تو ابلیس کو دے دیتا ہے پتھروں سے مانگنے والوں کو دے دیتا ہے، تم تو پھر امتی ہو اﷲ تعالیٰ کے سب سے پیارے دین کو ماننے والے، اﷲ تعالیٰ کے پیارے حبیب ﷺ کی امت سے ہو، تم کیسے مایوس ہو سکتے ہو؟

کسی امتی سے حسد نہ کرو، دل نہ دکھاؤ، تکلیف نہ دو، زیادتی نہ کرو یہ سوچ کر کہ یہ امتی ہے اﷲ کریم اور رحمت اللعالمین حضرت محمّد صلی اﷲ علیہ وآلہ وسلم کا پیارا ہے، معاف کردیا کرو دوسرے ہر مسلم کو یہ سوچ کر کہ اس ایک امتی کی وجہ سے میرے پیارے آقا خاتم الانبیاء ﷺ کو روز حشر سجدہ لمبا نہ کرنا پڑے، مزید نہ رونا پڑے، تم اس مشقت اور تکلیف کا باعث نہ بن جانا، معاف کردیا کرو سب کو، اﷲ تعالیٰ بہترین بدلہ لینے والا ہے، یا تو تم بدلہ لے لیا کرو تاکہ سبق سکھا سکو کہ ظالم اور ظلم نہ بڑھے،اگر بدلہ نہ لینا چاہو یا بدلہ لینے کی سکت نہ ہو تو معاف کردو دل میں کوئی بغض یا شکایت نہ رکھو ۔

الحمداﷲ ! امتی ہونے کا تشکر ہر پریشانی، ہر دکھ اور ہر کمی کو مٹا دیتا ہے، اﷲ تعالیٰ نے مجھے امتی پیدا فرما کر احسان عظیم تو کردیا، یارب امتی کے قابل بھی بنادے، دعا اور تمنا یہی ہے کہ امتی کی موت آئے اور روز حشر بھی امت سے خارج نہ کرے۔ آمین یارب العالمین💕🌿
آسیہ روبی

Asiya Ruby

لوحِ قلم کا مقصد آپ کی حوصلہ افزائی کرنا ہی نہیں بلکہ آپ کے یقین اورسوچ کومضبوط کرنا او معلومات پہنچانا ہے آپ کی سوچ ، کامیابی ، خوشی ، راحت اور سکون تک رسائی میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔ ایک سوچ تنکے کو بھی پہاڑ بنا سکتی ہے۔ وہی سوچ ایک پہاڑ کوتنکے کی .مانند کمزوربھی بنا سکتی ہے، یعنی آپ کی اپنی سوچ ہی ممکن کو ناممکن اور ناممکن کو ممکن بنانے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ آسیہ روبی The purpose of the "LoheQalam" is not only to encourage you but also to strengthen your beliefs and thinking and to convey information The biggest obstacle is access to your thinking, success, happiness, comfort, and tranquility. One thought can turn straw into a mountain. The same thinking can make you as weak as a mountain, that is, your own thinking is capable of making the impossible possible and the impossible possible


Leave a Comment

Leave a Reply